پالیسیاں۔۔۔ دغابازیاں

آ زادی کے مہینے میں وارد ہونے والے ’’ بجلی کے بل ‘‘ نے آتے ہی ہمیں آزادی کے اس سراب سے باہر نکال دیا ۔اُف خدایا۔۔۔ اتنا بل؟ پچھلے ماہ کا دوگناہ۔۔۔ بل ہاتھ میں لیتے ہی مجازی خدا کے غصہ کا پارہ ساتویں آسمان کو چُھو گیا۔۔۔ سارا نزلہ گھوم پھر کر ہم…

خون کے دھبے دھلیں گے کتنی برساتوں کے بعد

کراچی ایک بار پھر لہو لہان ہے۔ زخم خوردہ کراچی جس کا پرانا زخم مندمل ہی نہیں ہو پاتا کہ پھر ایک نیا زخم لگا دیا جا تا ہے۔ کراچی جو کبھی روشنیوں کا شہر تھا۔ اب دہشت گردی، بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ کا شہر ہے۔ کبھی جس کی راتیں جاگا کرتی اور شہری…

جن سے مل کر زندگی سے پیار ہو جائے

2 جون 2014 کو اخبار کے دفتر جاتے ہوئے موبائل فون کی گھنٹی بجی، دفتر کے ایک ساتھی کا فون تھا ، میں نے جیسے ہی فون آن کیا ان کا پہلا سوال تھا کہ ’’سلیم بھائی پاکستان ٹور پر گئے ہوئے لوگوں کے حوالے سے کیا خبریں ہیں ؟ کوئی حادثہ ہوگیا ہے کیا؟…

خواب گُل پریشان ہے!

’’فکر کی کوئی بات نہیں! یہ تبدیلی کی عمر ہے اس میں اسی طرح ہوتا ہے۔۔۔۔‘‘ ماہر نفسیات ڈاکٹر غزالہ نے شہلا کو تسلی دی اور کچھ ہلکی پھلکی دوائیں لکھ دیں مگر وہ خود بھی دل میںسوچ کر ہنس رہی تھیں کہ16برس کی تو وہ ہوتی ہے جب ہر چیز خوبصورت لگتی ہے بھلا…

نصراللہ شجیع

کہتے ہیں تجھے بھی چاہوں اور تیرے چاہنے وا لوں کو بھی چاہوں۔ اس قول کی صداقت مجھ پر اس وقت آشکار ہوئی جب دوران اجتماع پروگرام روک کر نصراللہ بھائی کے ملنے کی خصوصی دعا مانگی گئی۔ دلخراش حاثہ سن کر وہاں موجود تمام بہنوں کے کلیجے منہ کو آگئے تھے۔ ہر آنکھ پر…

اس شہر میں جو زندہ ہے۔۔۔

پچھلے سال اپریل کی بات ہے۔مغرب سے چند لمحوں پہلے موبائیل کی گھنٹی بجی۔ نامانوس نمبرہونے کے باوجود یہ سوچ کر اٹھا لیا کہ انتخابا ت کی گہما گہمی میں بہت سے نئے رابطے ہوئے ہیں جو موبائیل کی ڈائریکٹری میں محفوط نہیں ہوسکے ہیں مگر اٹینڈ کر نا ضروری محسوس ہوا۔ دوسری طرف ایک…

ضرورت ہے!

پچھلے ہفتے کی بات ہے نارتھ کراچی بذریعہ بس جانے کا قصد کیا۔دو آپشن تھے یا تو محسود کوچ یا پھر نیپا سے W-18 کے ذریعے جا یا جائے ۔کافی دیر نیپا اسٹاپ پر کھڑے رہنے کے بعد یہ ہولناک انکشاف ہوا کہ جوہرموڑ سے آنے والی زیادہ تر بسیں اوور ہیڈ برج پر سے…

فکر پاکستان۔۔۔۔۔ وہی پرانی فکر اور وہی پرانی سوچ

کاشف یحییٰ المعروف فکر پاکستان ایک سرگرم بلاگر اور منفرد سوچ و فکر کے مالک ہیں۔ کسی قدر جذباتی بھی ہیں اور جماعت اسلامی کے لیے اپنے دل میں ایک خاص قسم کا گوشہ رکھتے ہیں۔ انکا شمار جماعت اسلامی کے ان کرم فرماؤں میں ہوتا ہے جو سیلاب اور قدرتی آفات کو بھی جماعت…

جیل کا تالا ٹوٹے گا!

’’جیل کا تا لا ٹوٹے گا ! الطاف ہمارا چھوٹے گا۔۔۔‘‘ پڑوسی ڈاکٹر صاحب کی ننھی منی بچی ہمارے اور اپنے لان کی نیچی سی مشترکہ دیوار پر بیٹھی نظم کے انداز میں گارہی تھی اور ہم اپنے دانت کچکچا رہے تھے! ٹہرئیے قارئین! یہ کوئی لندن کی تصویر نہیں ہے اور نہ ہی یہ…